پھل بطور دوا

جسم انسانی میں تیزاب اور الکلی کا توازن برقرار رکھنے کیلئے پھل نہایت کارآمد ہیں۔ پھل جسم میں موجودان زہر یلے فاسد مادوں کو کم کرتے ہیں اور غیر صحت مند مادوں کے اخراج کا نظام تقویت پاتا ہے۔ پھلوں سے جسم کو درکار فطری شکر، وٹامنز اور معدنیات میسر آتی ہے۔

دنیا کے معروف ماہر غذا ایڈولف جسٹ اپنی کتاب میں رقم طراز ہیں کہ صرف پھل ہی انسان کیلئے شفا بخش جر ھے رکھتے ہیں۔ فطرت انہیں خود ہی تیار کر کے پیش کرتی ہے۔ ان کا ذائقہ لذیذ ہوتا ہے اور وہ تمام تر انسانی بیماریوں اور تکلیفوں کا یقینی علاج ہیں۔ بیماریوں کیلئے فطرت کا سب سے قدیم علاج اور موثر ترین مدارک روزہ ہے لیکن مذہبی نکتہ نظر سے قطع نظر روزے کا بہترین اور محفوظ طریقہ جوس کا روزہ ہے۔ اس کا طریقہ یہ ہے کہ کسی ایک پھل جیسے سنگترہ ، انگور یا گریپ فروٹ کا جوس اتنی مقدار کے پانی میں ملاکر ایک دن میں ہر دو دو گھنٹے بعد پیا جائے جوس پینا صبح آٹھ بجے شروع کیا جائے اور رات آٹھ بجے تک پیتے رہنا چاہئے اس دوران اور کوئی شے نہ کھائی جائے نہ ہی کوئی شربت پانی پیا جائے اگر ایسا کیا گیا تو جوس کے روزے کی ساری افادیت ضائع ہو جائے گی البتہ ڈبوں میں بند یا منجمد کئے ہوئے جوس استعمال کرنا درست نہیں صرف تازہ جوس ہی یہ مقصد پورا کر سکتے ہیں۔ ایک دن میں کم از کم چھ یا آٹھ گلاس جوس ضرور پیا جائے۔

تازہ پھلوں کے جوس میں پائے جانے والے وٹامنز، معدنی اجزاء، ان ائمنز اور دیگر عناصر جسم انسانی کے تمام افعال (نظام) کو معمول کے مطابق رکھتے ہیں جوس جسم انسانی کو درکا ر ایسے تمام عناصر مہیا کرتے ہیں جن کی بدولت جسم بذات خود علاج کا عمل خلیوں کی تعمیر نو اور ٹوٹ پھوٹ کی اصلاح کا عمل تیز تر کر کے صحت بحال کر دیتا ہے جس دن جوس کا روزہ ہو اس دن جسم کی صفائی کے خود کار عمل کے ذریعے زہریلے مادوں کے اخراج کو یقینی بنایا جائے۔

ایسا کرنے کیلئے گرم پانی کا انیمیا بھی لیا جا سکتا ہے۔ جس دن فروٹ جوس کا روزہ کھا جائے اس سے اگلے دن صرف پھلوں پر مینی غذا استعمال کی جائے کیونکہ یہ اخراج کا عمدہ ترین طریقہ ہے۔ بیماریوں پر غلبہ پانے کیلئے خصوصاً پرانی بیماریوں کی صورت میں خلیوں کی صفائی کے ذریعے غالب آنے کیلئے تازہ رس بھرے پھلوں کی قدر و قیمت بہت زیادہ ہے۔ صرف پھلوں پر مبنی غذا استعمال کی جائے جو بہت زیادہ مفید ہوتی ہے۔ خاص طور پر پرانی کھانسی گنٹھیا جوڑوں کے درد، پرانا نزلہ اور قبض ختم کرنے کیلئے لاجواب دوا ثابت ہوتی ہے کیونکہ پھلوں پر منی غذا سے جسم معدنی نمکیات سے بھر جاتا ہے جس روز آل فروٹ ڈائٹ ( پھلوں پر مبنی غذا) پر عمل کیا جائے اس دن تین بار یہ غذا لی جائے۔ ایک وقت کے کھانے میں تازہ پکے ہوئے رس بھرے پھل جیسے سیب، ناشپاتی ، انگور، سنگترہ، اناس، گریپ فروٹ، مالٹا، آڑو،خربوزہ وغیرہ یا موسم کے دیگر پھل کھائے جائیں البتہ کیلا یا دیگر غذائی چیزیں استعمال نہ کی جائیں۔ سادہ پانی یا چینی کے بغیر لیموں کا استعمال کیا جائے۔ 

Leave a Comment

You cannot copy content of this page